ہفتہ , 31 اکتوبر 2020
Home / تعلیم / بلوچ طلبا کا لانگ مارچ چیچہ وطنی پہنچ گیا

بلوچ طلبا کا لانگ مارچ چیچہ وطنی پہنچ گیا

چیچہ وطنی (ساہیوال نیوز لائیو – 14اکتوبر 2020 – یاسر مغل سے) بلوچ طلبہ کی پیدل لانگ مارچ ریلی شہر والا پل پہنچنے پر مختلف جماعتوں کے رہنماؤں نے جس میں پاکستان پیپلز پارٹی کے رانا نعیم الرحمان خاں، صدر مرکزی انجمن تاجران حافظ محمد بلال، مسلم لیگ ن کے سابق کونسلرز رانا محمد شاہد، سلطان مصطفائی، میاں عاشق انصاری، پیر معین الدین چشتی سیکرٹری انفارمیشن مسلم لیگ ن ضلع ساہیوال تنزیل درانی، سابق جنرل سیکرٹری بار چوہدری غلام دستگیر گجر، آمنہ جلال ایڈووکیٹ خواتین ونگ نیشنل پارٹی پنجاب ، چوہدری شہباز علی ایڈووکیٹ چوہدری محمد ناصر ایڈووکیٹ، شیخ ارسلان ایڈووکیٹ، عظیم گل ایڈووکیٹ اور نیشنل پارٹی کے کارکنان نے انکا استقبال کیا۔

اکرم جلال ایڈووکیٹ ، رانا یاسر الطاف ایڈووکیٹ سیکرٹری انفارمیشن نیشنل پارٹی طلبہ کا کہنا تھا کہ بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی کی انتظامیہ کی طرف سے بلوچستان کے طلبہ کا سکالر شپ کوٹہ کو ختم کرنے کے خلاف بلوچ طلبہ نے چالیس دن تک بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی ملتان کے گیٹ کے سامنے احتجاجی دھرنا دیے رکھا لیکن حکومت پنجاب اور یونیورسٹی کی انتظامیہ نے کوئی نوٹس نہ لی۔

جس کے بعد طلبہ نے اپنے حق کیلئے لانگ مارچ کا ارادہ کیا جو گیارہ اکتوبر کو ملتان سے شروع کیا گیا جس میں طلبہ پیدل مارچ کرتے ہوئے اسلام آباد کی طرف رواں دواں ہیں۔

طلبہ کا موقف ہے کہ چھوٹے صوبوں کے طلبہ کا کوٹہ ختم کرکے پنجاب حکومت اور یونیورسٹی انتظامیہ بلوچ طلبہ کو تعلیم کے حق سے محروم کرنا چاہتی ہے۔

انکا مطالبہ کہ طلبہ کا کوٹہ جس میں بغیر فیس اور مفت ہاسٹل کی سہولت دی گئی تھی اس کو فوری بحال کیا جائے، اگر بحال نہ کیا اور حکومت نے چھوٹے صوبوں اور طلبہ کا استحصال بند نہ کیا تو احتجاج کا دائرہ بڑھا دیا جائے گا۔ بعد ازاں شرکاء اسلام آباد روانہ ہوگئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے